2014 اکتوبر 4

فرقہ واریت میں بٹ گئے محمود و ایاز۔ 
نہ کوئی مسلمان رھا نا ھی اتحاد۔

2009 مئی 25

کامیابی کا واحد راستہ

میرے نزدیک کامیابی کا واحد راستہ تدبیر کرنا اور تقدیر پر بھروسہ ہے۔ جب دونوں کا سرچشمہ اللہ کی ذات ہو۔

2008 مئی 30

Kaisa situm hay tumhara by Dr Kashif


Kaisa situm hay tumhara
کیسا ستم ہے تمہارا
What is this hardship of yours?

Rishtaa bhi tumhaara Qurbaat bhi tumhaari
رشتہ بھی بمہارا، قربت بھی بمہاری
Relationship is yours, we are near to you

Khilafat bhi tumhari Siasaat bhi tumhaari
خلافت بھی بمہاری، سیاست بھی بمہاری
Caliphate is your, politics is yours

Siddique bhi tumharra Siddiqa bhi tumhari
صدیق بھی بمہارا، صدیقی' بھی بمہاری
Siddique (who always speaks truth) is yours, Siddiqa (who always speaks truth female) is yours

Durbaar bhi tumharra Suchaie bhi tumhari
دربار بھی بمہارا، سچائی بھی بمہاری
Court is yours, Honesty is yours.

Farooq bhi tumharra Tulwar bhi tumhari
فاروق بھی بمہارا، تلوار بھی بمہاری
Farooq(The Distinguisher between Truth and Falsehood , Omar the Great) is yours, Sword is yours
order bhi tumharra AAg bhi tumhaari
حکم بھی بمہارا، آگ بھی بمہاری
Order was yours, fire was yours

Ghani bhi tumhaarra Payass bhi tumhaari
غنی بھی بمہارا، پیاس بھی بمہاری
Ghani(Uthmān ibn ‘Affān, Generous) was yours, and thirst was yours.
Baiyat bhi tumhaari Baghawat bhi tumhaari
بیت بھی بمہاری، بغاوت بھی بمہاری
Oath was yours, rebellion was yours.

Gawah bhi tumhaara Gawahi bhi tumhaari
گواہ بھی بمہارا، گواہی بھی بمہاری
Witness was yours, confirmation was yours
Oont bhi tumhaaray Amman bhi tumhaari
اونٹ بھی بمہارے، امانت بھی بمہاری
Camel was yours, sanctuary was yours.

Khalifa bhi tumhaara Foaj bhi tumhaari
خلیفہ بھی بمہارا، فوج بھی بمہاری
Caliph was yours; army was yours.
Lashkar bhi tumhaara Janaat bhi tumhaari
لشکر بھی بمہارا، جنت بھی بمہاری
Soldiers was yours, Heaven was yours.

yar-e-gar bhi tumhara awaz bhi tumhaari
یارغیر بھی بمہارا، آواز بھی بمہاری
Unknown friend is yours; sound was yours.
Rona bhi tumhaara Aayat bhi tumhaari
رونا بھی بمہارا، آیت بھی بمہاری
Crying was yours; verses were yours.

Quran bhi tumhaara Hadeesaien bhi tumhaari
قرآن بھی بمہارا، حدیث بھی بمہاری
Quran was yours; sayings (Hadees) were yours.
Mimber bhi tumhaara zabanien bhi tumhaari
میں بھی بمہارا، زبان بھی بمہاری
I am yours; Tongues are yours.

KIS KIS JAGHA ROKO GAY IS GULAM KI AWAZ
کس کس جگہ روکو گے اس غلام کی آواز کو
At how many places you will make this servant quiet.
Giraybaan bhi tumharaa AANKHIEN bhi tumhari
گریبان بھی بمہارا، آنکھیں بھی بمہاری
Collar is yours; eyes are yours

2008 مئی 12

محبت

"محبت کی ناکامی یا کامیابی دونوں کا نتیجہ خانہ خرابی"
مجیب الرحمن' شامی

2008 اپریل 29

منجا نب ڈاکٹر کاشف

Mujh ko apny hazoor rehny do
مجھ کو اپنے حضور رہنے دو
Kuch mera bhi gharoor rehny do
کچھ میرا بھی غرور رہنے دو
Muskurahat na rokna apni
مسکراہٹ نا روکنا اپنی
Meri aankhon main noor rehny do
میری آنکھوں میں نور رہنے دو
Raaston ka khumaar kafi hai
راستوں کو خمار کافی ہے
Manzilon ka saroor rehny do
منزلوں کا صرور کافی ہے
Har khatta ki sazaa nahi lazim
ہر خطا کی سزا نہیں لازم
Kuch to mera qasoor rehny do
کچھ تو میرا قصور رہنے دو
Tootany main ajeeb lazzat hai
ٹوٹنے میں بھی عجیب لزت ہے
Tum mujh ko chakna choor rehny do
تم مجھے چکنا چور رہنے دو

ہم دیکھیں گے | We shall see | Hum Dekhein gay

Artist: Iqbal Bano
Writer: Faiz Ahmad Faiz
آرٹسٹ: اقبال بانو
شاعر: فیض احمد فیض
Hum Dekhein gay
Hum Dekhein gay

Lazim hein k Hum Dekhein gay
Who din ke jiska wada hay
Jo loh e azal mein likha hay
Hum dekhein gay
Lazim hein k Hum Dekhein gay
Who din ke jiska wada hay


Jub zulm o sitam k koh e garan
roi ki tarah urr jain gay
Jub zulm o sitam k koh e garan
roi ki tarah urr jain gay

Hum mehkoomon ke paaon tale
ye dharti dhahr dharh dharke gi
Aur ahle hakam ke sir oper
Jub bijli kar kar karke gi

Lazim hein k Hum Dekhein gay

Jub zulm o sitam ke koh e garan
roi ki tarah ur jain gay
Roi ki tarah ur jain gay
Hum mehkoomon ke paaon tale
ye dharti dhahr dharh dharke gi
Aur ahle hakam ke sir oper
Jub bijli kar kar karke gi


Hum Dekhein gay
Hum Dekhein gay
Hum Dekhein gay

Jub arz e khuda ke kaabay se
sub butt uthwai jain gay
Hum ahle safa, mardood e haram
Masnad pe bithai jain gay
sub taj uchale jain gay
Sub takht giray jain gay
Hum dekhien gay
Bus naam rahe ga Allah ka
Jo ghaib bhi hay hazir bhi
Jo nasir bhi hay mansir bhi
Uthay gay unal Haq ka nara
JO mein bhi hon aur tum bhi ho
aur raj kare gi khalq e khuda
JO mein bhi hon aur tum bhi ho

Hum dekhien gay
Bus naam rahe ga Allah ka
Jo ghaib bhi hay hazir bhi
Jo nasir bhi hay mansir bhi
Uthay gay unal Haq ka nara
Jo mein bhi hon aur tum bhi ho
aur raj kare gi khalq e khuda
Jo mein bhi hon aur tum bhi ho

ہم دیکھیں گے
ہم دیکھیں گے

لاظم ہے کہ ہم دیکھیں گے
وہ دن کہ جس کا وعدہ ہے
جو لوہ ازل میں لکھا ہے
ہم دیکھیں گے
لاظم ہے کہ ہم دیکھیں گے
وہ دن کہ جس کا وعدہ ہے


جب ظلم و ستم کے کوہ گرم
روئی کی طرح اڑ جائیں گے
جب ظلم و ستم کے کوہ گرم
روئی کی طرح اڑ جائیں گے

ہم محکوموں کے پائوں تلے
یہ دھرتی دھڑ دھڑ دھڑکے گی
اور اہل حکم کے سر اوپر
جب بجلی کڑ کڑ کڑکے گی

لاظم ہے کہ ہم دیکھیں گے
جب ظلم و ستم کے کوہ گرم
روئی کی طرح اڑ جائیں گے
روئی کی طرح اڑ جائیں گے
ہم محکوموں کے پائوں تلے
یہ دھرتی دھڑ دھڑ دھڑکے گی
اور اہل حکم کے سر اوپر
جب ظلم و ستم کے کوہ گرم


ہم دیکھیں گے
ہم دیکھیں گے
ہم دیکھیں گے


جب ارض خدا کے کعبے سے
سب بت اٹھوائے جائیں گے
ہم اہل صفی'، مردود حرم
مصند پےبٹھائیں جائیں گے
سب تاج اچھالے جائیں گے
سب تخت گر‏آئے جائیں گے

ہم دیکھیں گے
بس نام رہے گا الللھ کا
جو غائب بھی ہے حاظر بھی
جو ناصر بھی ہےمنصور بھی
اٹھیں گے انل حق کے نعرے
جو میں بھی ہوں اور تم بھی ہو
اور راج کرے گی خلق خدا
جو میں بھی ہوں اور تم بھی ہو

ہم دیکھیں گے
بس نام رہے گا الللھ کا
جو غائب بھی ہے حاظر بھی
جو ناصر بھی ہےمنصور بھی
اٹھیں گے انل حق کے نعرے
جو میں بھی ہوں اور تم بھی ہو
اور راج کرے گی خلق خدا
جو میں بھی ہوں اور تم بھی ہو

We shall see

It is a must that we shall see
The day that has been prophesized
The one written on the Tablet of Fate

We shall see

When the insurmountable mountains of oppression
Shall blow as if cotton flakes
And beneath the feet of us common folk
This land will throb with a deafening sound
And upon the heads of the despotic folk
Lightening will strike a thundering pound.

We shall see

When from the Palace of our Lord
All earthly gods will be taken out
We, righteous ones, outcasts of Church,
shall don a glorious robe, no doubt.
All crowns will fly
All thrones will fall

We shall see

Only the name of the Lord will stay on
who is unseen, yet ever seeing
who is the sight, as well as the scene
The shout of "I am The Truth"* shall rise
which is true for you and I
and the creation of the Lord will rule
which is true for you and I.

We shall see

It is a must that we shall see

We shall see

---------
Lyrics Contributed By: Abdullah Khan(Urdu:Roman) Omer(English) Faraz Ahmad(URDU)
----------

2008 اپریل 18

سُوۡرَةُ إبراهیم

سُوۡرَةُ إبراهیم
أَلَمۡ تَرَ كَيۡفَ ضَرَبَ ٱللَّهُ مَثَلاً۬ كَلِمَةً۬ طَيِّبَةً۬ كَشَجَرَةٍ۬ طَيِّبَةٍ أَصۡلُهَا ثَابِتٌ۬ وَفَرۡعُهَا فِى ٱلسَّمَآءِ (٢٤) تُؤۡتِىٓ أُڪُلَهَا كُلَّ حِينِۭ بِإِذۡنِ رَبِّهَا‌ۗ وَيَضۡرِبُ ٱللَّهُ ٱلۡأَمۡثَالَ لِلنَّاسِ لَعَلَّهُمۡ يَتَذَڪَّرُونَ (٢٥)

کیا تم نے نہیں دیکھا کہ خدا نے پاک بات کی کیسی مثال بیان فرمائی ہے (وہ ایسی ہے) جیسے پاکیزہ درخت جس کی جڑ مضبوط (یعنی زمین کو پکڑے ہوئے) ہو اور شاخیں آسمان میں (۲۴)
اپنے پروردگار کے حکم سے ہر وقت پھل لاتا (اور میوے دیتا) ہو۔ اور خدا لوگوں کے لیے مثالیں بیان فرماتا ہے تاکہ وہ نصیحت پکڑیں (۲۵)


تفصیر
الللھ کی پاک بات کلکھ طیبھ کی مثال ہے پاک درخت، شجرہ طیبھ پاک شجرہ، جس کی مضبوط جڑ الللھ کی ذات ہے، جو کہ پوشیدہ ہے، پھر ذات محمد ۖ ہے، جو ظاہر اور باطں دونوں ہے۔ شجر کا تنا علی کی ذات ہے۔ شاخیں معصومیں۔ اور پھل فاطمہ ہیں۔